افغان صوبے ننگرہار میں خودکش حملہ، 68 افراد ہلاک 14

افغان صوبے ننگرہار میں خودکش حملہ، 68 افراد ہلاک

افغان صوبے ننگرہار میں خودکش حملہ، 68 افراد ہلاک

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق افغانستان کے صوبے ننگرہار کے ضلع مہمند درہ میں خود کش بمبار نے مظاہرین کے درمیان خود کو دھماکے سے اڑا دیا مظاہرین کی بڑی تعداد مقامی پولیس کمانڈر کی برطرفی کے لیے جلال آباد طورخم ہائی وے پر مہمند درہ کے مقام پر احتجاج کررہی تھی۔

افغان نیوز ایجنسی خامہ پریس کی رپورٹ کے مطابق حکام نے ننگر ہار کے ضلع مہمند درا میں ہونے والے دھماکے میں 68 افراد کی ہلاکتوں اور 165 افراد کے زخمی ہونے کی تصدیق کی ہے۔

افغان صوبے ننگرہار میں خودکش حملہ، 68 افراد ہلاک

افغانستان میں طالبان، مقامی اور امریکی اتحادی فورسز کے خلاف برسرِ پیکار ہیں جبکہ داعش بھی وہاں قدم جمانے کی کوشش کر رہی ہے۔ ابھی تک ننگر ہار دھماکے کی ذمہ داری تاحال کسی بھی گروپ کی جانب سے قبول نہیں کی گئی۔

گزشتہ ماہ عیدالاضحیٰ کے موقع پر افغان حکومت نے 3 ماہ کے لیے طالبان سے جنگ بندی کااعلان کیا تھا، جسے شدت پسند تنظیم نے مسترد کردیا تھا۔

افغان طالبان کے ایک ترجمان کی جانب سے جاری کیے گئے بیان کے مطابق سپریم کمانڈر ہیبت اللہ اخوند زادہ کا کہنا تھا کہ ‘حکومت کے خلاف لڑائی جاری رہے گی، ہماری جنگ بندی سے امریکی فورسز کو افغانستان میں قیام بڑھانے کا موقع مل جائےگا’۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں